74

پہلے پانچ منٹ اہم ہوں گے

ائیر کنڈیشنر سے پانی کی بوندیں گر رہی تھیں‘ دیوار کے بالکل نیچے شیشے کا مرتبان رکھا تھا‘ ائیر کنڈیشنر کی سفید باڈی پر پانی کا قطرہ بنتا تھا اور وہ چند سیکنڈ بعد ٹپ کی آواز کے ساتھ مرتبان میں جا گرتا تھا‘ صاحب یہ آواز سنتے تھے اور خوش ہوتے تھے‘ میں نے ڈرتے ڈرتے عرض کیا‘ آپ اپنا اے سی ٹھیک کیوں نہیں کرا لیتے‘ مکینک آئے گا اور منٹوں میں یہ ٹپ ٹپ بند ہو جائے گی‘ وہ ہنس کر بولے ”تم چاہتے ہو میں ساون کی خوشی سے محروم ہو جاﺅں“ ۔

میں خاموشی سے ان کی طرف دیکھتا رہا‘ وہ بولے ”یہ ٹپ ٹپ صرف ٹپ ٹپ نہیں یہ ساون کی ای میل بھی ہے‘ میرا اے سی خشک گرمیوں میں

خاموش رہتا ہے لیکن فضا میں جوں ہی ساون کی نمی آتی ہے یہ ٹپ ٹپ کرنے لگتا ہے اور میں یہ آوازیں انجوائے کرتا ہوں‘ یہ آوازیں اور یہ نمی جولائی کے آخر اور اگست کے شروع میں دوگنی ہو جائیں گی اور میں یہ سن سن کر خوش ہوتا رہوں گا“ صاحب نے اس کے ساتھ ہی سگار سلگایا اور کمرے میں کیوبن تمباکو کی خوشبو پھیلنے لگی۔میں نے عرض کیا” وزیراعظم عمران خان 20 جولائی کو امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے ملاقات کے لیے واشنگٹن جا رہے ہیں‘ یہ میٹنگ کیسی رہے گی“ وہ ہنس کر بولے ”پاکستانی ٹرمپ امریکی ٹرمپ سے ملنے جا رہا ہے“ میں نے بے چین ہو کر کروٹ بدلی اور عرض کیا ”سر یہ زیادتی ہے‘ یہ ہمارے وزیراعظم ہیں“ وہ مزید ہنسے اور بولے ”یہ میں نہیں کہہ رہا‘ یہ امریکی میڈیا کا خیال ہے“ وہ رکے اور چند لمحے سوچ کر بولے ”آپ کو یہ جان کر حیرت ہو گی صدر ٹرمپ دنیا کے واحد لیڈر ہیں جو پروٹوکول کا خیال نہیں رکھتے‘ یہ دنیا بھر کے لیڈروں سے ملتے ہیں‘ انہیں پانچ منٹ میں جو شخص کلک کر جاتا ہے یہ اس کے لیے دن بھر کی تمام مصروفیات منسوخ کر دیتے ہیں اور یہ پھر اسے لنچ یا ڈنر کے لیے بلیئر ہاﺅس لے جاتے ہیں‘ یہ اس کے ساتھ گالف کھیلتے ہیں‘ واک کرتے ہیں اور اپنی زندگی کے لطیفے شیئر کرتے ہیں لیکن اگر وہ شخص انہیں کلک نہ کرے تو یہ پانچ منٹ میں بور ہو جاتے ہیں اور وہ شخص پوپ ہی کیوں نہ ہو یہ اٹھ کر اس کے ساتھ ہاتھ ملاتے ہیں اور باہر نکل جاتے ہیں۔

آپ شمالی کوریا کے صدر کم جونگ کو لے لیں‘ امریکا 70سال سے شمالی کوریا کا دشمن ہے لیکن کم جونگ کلک کر گئے اور صدر ٹرمپ ان سے ملنے کے لیے سنگا پور بھی گئے اور یہ 30جون کو پن مون جوم(ساﺅتھ کوریا) کی سرحد پر چلتے چلتے شمالی کوریا کی حدود میں بھی داخل ہو گئے یوں یہ شمالی کوریا کے صدر سے ملاقات اور شمالی کوریا کی زمین پر قدم رکھنے والے پہلے امریکی صدر بن گئے‘ آپ یہ بھی یاد رکھیں صدر ٹرمپ نے19 ستمبر 2017ءکو اقوام متحدہ کی اپنی پہلی تقریر میںشمالی کوریاکو دھمکی دی تھی ”امریکا کو خطرہ ہوا تو شمالی کوریا کو ختم کر دیں گے“۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں